ساز دے کے تاروں کو چھیڑ تو دیا تم نے (ردیف .. ی)

فرید جاوید

ساز دے کے تاروں کو چھیڑ تو دیا تم نے (ردیف .. ی)

فرید جاوید

MORE BYفرید جاوید

    ساز دے کے تاروں کو چھیڑ تو دیا تم نے

    ساز دل کے تاروں کی بات بھی سنی ہوتی

    ہم جو شعلۂ جاں کی لو نہ تیز کر دیتے

    آج غم کی راہوں میں کتنی تیرگی ہوتی

    ان سے چھیڑ دیتے ہم رنگ و نور کی باتیں

    داستان شوق اپنی خود ہی چھڑ گئی ہوتی

    شکوۂ کرم کیوں ہے وہ اگر کرم کرتے

    اور بھی محبت کی پیاس بڑھ گئی ہوتی

    اہل دل وہاں سے بھی نغمہ زن گزر آئے

    لے جہاں محبت کی ٹوٹ ہی گئی ہوتی

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    فرید جاوید

    فرید جاوید

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY