Font by Mehr Nastaliq Web

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

سبق کتاب کا پکا نہیں کیا میں نے

صابر آفاق

سبق کتاب کا پکا نہیں کیا میں نے

صابر آفاق

MORE BYصابر آفاق

    سبق کتاب کا پکا نہیں کیا میں نے

    ابھی سمجھنا ہے جیون کا فلسفہ میں نے

    بجھائی پیاس نہیں بس نہا لیا میں نے

    لیا ہے کام سمندر سے دوسرا میں نے

    بھلا وہ آنکھوں سے غم کا پتا لگائے گا کیا

    پہن لیا ہے یہ چشمہ جو دھوپ کا میں نے

    ہوا ہے غیر قبیلے کی اک حسیں سے عشق

    ابھی تو کرنا ہے مشکل کا سامنا میں نے

    کسی مزار پہ منت سے اس کو پایا ہے

    کہ ایک دھاگے سے کھینچا ہے دائرہ میں نے

    مثالیں دیتے تھے استاد میں سمجھتا نہ تھا

    پھر اس کے کہنے سے سمجھا تھا زاویہ میں نے

    نشست ہے نہیں کہہ کر کئی بسیں چھوڑیں

    تجھے بچانے میں کتنوں کو کھو دیا میں نے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے