سبھوں سے یوں تو ہے دل آپ کا خوش

میر محمدی بیدار

سبھوں سے یوں تو ہے دل آپ کا خوش

میر محمدی بیدار

MORE BYمیر محمدی بیدار

    سبھوں سے یوں تو ہے دل آپ کا خوش

    اگر پوچھو تو ہے ہم سے ہی نا خوش

    خوشی تیری ہی ہے منظور ہم کو

    بلا سے گر کوئی نا خوش ہو یا خوش

    رواق چشم و قصر دل کیا سیر

    نہ کی پر آپ نے یاں کوئی جا خوش

    جفا کر یا وفا مختار ہے تو

    مجھے یکساں ہے کیا نا خوش ہے کیا خوش

    نہیں اس میں تو غیر از جور لیکن

    مجھے کیا جانے کیا آئی ادا خوش

    کیا ہے گرچہ نا خوش تو نے ہم کو

    رکھے پر اے بتاں تم کو خدا خوش

    خوشی ہے سب کو روز عید کی یاں

    ہوئے ہیں مل کے باہم آشنا خوش

    بھلا کچھ بھی مناسب ہے مری جاں

    کہ ہو تو آج کے دن مجھ سے نا خوش

    بتا ایسی کوئی تدبیر بیدارؔ

    کہ جس سے ہووے میرا دل ربا خوش

    مآخذ:

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY