سچ یہی ہے کہ بہت آج گھن آتی ہے مجھے

صابر

سچ یہی ہے کہ بہت آج گھن آتی ہے مجھے

صابر

MORE BYصابر

    سچ یہی ہے کہ بہت آج گھن آتی ہے مجھے

    ویسے وہ شے کبھی مطلوب رہی بھی ہے مجھے

    اپنی تنہائی کو بازار گھما لایا ہوں

    گھر کی چوکھٹ پہ پہنچتے ہی لپٹتی ہے مجھے

    تجھ سے ملتا ہوں تو آ جاتی ہے آنکھوں میں نمی

    تو سمجھتا ہے شکایت یہ پرانی ہے مجھے

    اس کے شر سے میں سدا مانگتا رہتا ہوں پناہ

    اسی دنیا سے محبت بھی بلا کی ہے مجھے

    بس اسی وجہ سے ہے اس کی زباں میں لکنت

    اس کو وہ بات سنانی ہے جو کہنی ہے مجھے

    RECITATIONS

    صابر

    صابر

    صابر

    سچ یہی ہے کہ بہت آج گھن آتی ہے مجھے صابر

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY