سفر کا شوق نہ منزل کی جستجو باقی

عابد ادیب

سفر کا شوق نہ منزل کی جستجو باقی

عابد ادیب

MORE BYعابد ادیب

    سفر کا شوق نہ منزل کی جستجو باقی

    مسافروں کے بدن میں نہیں لہو باقی

    تمام رات ہواؤں کا گشت جاری تھا

    سویرے تک نہ رہا کوئی ہو بہ ہو باقی

    سبھی طرح سے تعارف تو ہو گیا ان کا

    رہی ہے اب تو ملاقات روبرو باقی

    جو بھیڑ بکھرے تو دیکھوں طلب یہ کیسی ہے

    دیار غیر میں ہے کس کی جستجو باقی

    وہی نظارے وہی گرمئ سخن ہے مگر

    نہ ہی وہ بات نہ وہ طرز گفتگو باقی

    زمانہ مجھ سے جدا ہو گیا زمانہ ہوا

    رہا ہے اب تو بچھڑنے کو مجھ سے تو باقی

    اسی لحاظ کا عابدؔ ملال ہے ہم کو

    رہا نہ آج جو دوران گفتگو باقی

    مآخذ:

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY