سفر کی آخری منزل کے راہبر ہم ہیں

شبنم شکیل

سفر کی آخری منزل کے راہبر ہم ہیں

شبنم شکیل

MORE BYشبنم شکیل

    سفر کی آخری منزل کے راہبر ہم ہیں

    ہمارے ساتھ چلو گرد رہ گزر ہم ہیں

    لکھی ہیں چہروں پہ جو سرخیاں پڑھو ان کو

    خبر ہو عام کہ دنیا سے با خبر ہم ہیں

    اکیلا پن ہمیں محسوس کب ہوا اب تک

    کہ دشت دشت ہیں لیکن نگر نگر ہم ہیں

    گھنیرے سائے نہ ڈھونڈو یہیں پہ دم لو ذرا

    کہ جس کی چھاؤں میں ٹھنڈک ہے وہ شجر ہم ہیں

    سمندروں سے کہو وہ سمٹ کے آ جائیں

    کہ اس جہاں میں اکیلے ہی کوزہ گر ہم ہیں

    وہ خوب شخص ہے دیکھا ہے مل کے ہم نے اسے

    مگر ہے یہ بھی حقیقت کہ خوب تر ہم ہیں

    مأخذ :
    • کتاب : Shab Zaad (Pg. 51)
    • Author : Shabnam Shakeel
    • مطبع : Mavaraa Publications (1978)
    • اشاعت : 1978

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY