سفر میں ایسے کئی مرحلے بھی آتے ہیں

عابد ادیب

سفر میں ایسے کئی مرحلے بھی آتے ہیں

عابد ادیب

MORE BYعابد ادیب

    سفر میں ایسے کئی مرحلے بھی آتے ہیں

    ہر ایک موڑ پہ کچھ لوگ چھوٹ جاتے ہیں

    یہ جان کر بھی کہ پتھر ہر ایک ہاتھ میں ہے

    جیالے لوگ ہیں شیشوں کے گھر بناتے ہیں

    جو رہنے والے ہیں لوگ ان کو گھر نہیں دیتے

    جو رہنے والا نہیں اس کے گھر بناتے ہیں

    جنہیں یہ فکر نہیں سر رہے رہے نہ رہے

    وہ سچ ہی کہتے ہیں جب بولنے پہ آتے ہیں

    کبھی جو بات کہی تھی ترے تعلق سے

    اب اس کے بھی کئی مطلب نکالے جاتے ہیں

    مآخذ:

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY