سحر کے ساتھ چلے روشنی کے ساتھ چلے

خورشید احمد جامی

سحر کے ساتھ چلے روشنی کے ساتھ چلے

خورشید احمد جامی

MORE BYخورشید احمد جامی

    سحر کے ساتھ چلے روشنی کے ساتھ چلے

    تمام عمر کسی اجنبی کے ساتھ چلے

    ہمیں کو مڑ کے نہ دیکھا ہمیں سے کچھ نہ کہا

    اس احتیاط سے ہم زندگی کے ساتھ چلے

    تمہارے شہر میں انجان سا مسافر تھا

    تمہارے شہر میں جس آدمی کے ساتھ چلے

    غموں نے پیار سے جس وقت ہاتھ پھیلائے

    تو سب کو چھوڑ کے ہم کس خوشی کے ساتھ چلے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY