سماعتوں کے لیے راز چھوڑ آئے ہیں

محسن اسرار

سماعتوں کے لیے راز چھوڑ آئے ہیں

محسن اسرار

MORE BYمحسن اسرار

    سماعتوں کے لیے راز چھوڑ آئے ہیں

    ہم اس کے شہر میں آواز چھوڑ آئے ہیں

    ہم اس کی سوچ میں امکان انتہا سے الگ

    نیا سفر نیا آغاز چھوڑ آئے ہیں

    مذاکرات سر وصل کامیاب رہے

    جو کچھ کیا تھا پس انداز چھوڑ آئے ہیں

    ہوا میں اڑتا ہوا رزق پا لیا لیکن

    پرندے جرأت پرواز چھوڑ آئے ہیں

    لبوں کو اس کی ہتھیلی پہ رکھ کے ہم محسنؔ

    تخیلات کے اعجاز چھوڑ آئے ہیں

    مأخذ :
    • کتاب : shor bhi sannata bhi (rekhta website) (Pg. 125)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے