سنبھلا نہیں دل تجھ سے بچھڑ کر کئی دن تک

شاذ تمکنت

سنبھلا نہیں دل تجھ سے بچھڑ کر کئی دن تک

شاذ تمکنت

MORE BYشاذ تمکنت

    سنبھلا نہیں دل تجھ سے بچھڑ کر کئی دن تک

    میں آئینہ تھا بن گیا پتھر کئی دن تک

    کیا چیز تھی ہم رکھ کے کہیں بھول گئے ہیں

    وہ چیز کہ یاد آئی نہ اکثر کئی دن تک

    اے شاخ وفا پھر وہ پرندہ نہیں لوٹا

    میں گھر میں تھا نکلا نہیں باہر کئی دن تک

    وہ بوجھ کہ تھی جس سے مرے سر کی بلندی

    وہ بوجھ گرا اٹھ نہ سکا سر کئی دن تک

    ہم نے بھی بہت اس کو بھلانے کی دعا کی

    ہم نے بھی بہت دیکھا ہے رو کر کئی دن تک

    کہتے ہیں کہ آئینہ بھی دیکھا نہیں اس نے

    سنتے ہیں کہ پہنا نہیں زیور کئی دن تک

    ہم تان کے سوئے تھے کہ کیوں آئے گا وہ شاذؔ

    دیتا رہا دستک وہ برابر کئی دن تک

    مأخذ :
    • کتاب : Kulliyat-e- Shaz Tamkanat (Pg. 563)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY