سر تیرے آستاں پہ جھکائے ہوئے ہے ہم

یادگار حسین نشتر خیرابادی

سر تیرے آستاں پہ جھکائے ہوئے ہے ہم

یادگار حسین نشتر خیرابادی

MORE BYیادگار حسین نشتر خیرابادی

    سر تیرے آستاں پہ جھکائے ہوئے ہے ہم

    یعنی فراز عرش پے چھائے ہوئے ہے ہم

    حاصل ہمیں ہے لطف بہار جمال دوست

    مے خانہ آج سر پے اٹھائے ہوئے ہے ہم

    گم کردہ راہ کعبہ و بت خانہ سے اب دور

    ان منزلوں کی خاک اڑائے ہوئے ہیں ہم

    آ شیخ میکدے میں تیری عاقبت بخیر

    رحمت کو بوتلوں میں چھپائے ہوئے ہیں ہم

    نشترؔ تصور رخ تاباں ہے رات دن

    غم کو بہت حسین بنائے ہوئے ہیں ہم

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY