شب غم کی سحر نہیں ہوتی

رام کرشن مضطر

شب غم کی سحر نہیں ہوتی

رام کرشن مضطر

MORE BYرام کرشن مضطر

    شب غم کی سحر نہیں ہوتی

    داستاں مختصر نہیں ہوتی

    جب کسی کی نظر نہیں ہوتی

    ہم کو اپنی خبر نہیں ہوتی

    بعض اوقات اپنے دل پر بھی

    اہل دل کی نظر نہیں ہوتی

    ڈگمگاتے نہیں قدم جس جا

    وہ تری رہ گزر نہیں ہوتی

    جس مسرت میں غم نہ ہو شامل

    وہ کبھی معتبر نہیں ہوتی

    درد جب خود ہی اپنا درماں ہو

    منت چارہ گر نہیں ہوتی

    دل مضطرؔ سے جو نکلتی ہے

    وہ صدا بے اثر نہیں ہوتی

    مآخذ :
    • Raqs-e-bahar

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY