شب جو دل بیقرار تھا کیا تھا

قائم چاندپوری

شب جو دل بیقرار تھا کیا تھا

قائم چاندپوری

MORE BYقائم چاندپوری

    شب جو دل بیقرار تھا کیا تھا

    کسی کا انتظار تھا کیا تھا

    چشم در پر تھی صبح تک شاید

    کچھ کسی سے قرار تھا کیا تھا

    مدت عمر جس کا نام ہے آہ

    برق تھی یا شرار تھا کیا تھا

    دیکھ مجھ کو جو بزم سے تو اٹھا

    کچھ تجھے مجھ سے عار تھا کیا تھا

    پھر گئی وہ نگہ جو یوں محرم

    سیل تھی یا کٹار تھا کیا تھا

    رات قائمؔ تو اس مزاج پہ واں

    سخت بے اختیار تھا کیا تھا

    RECITATIONS

    فصیح اکمل

    فصیح اکمل

    فصیح اکمل

    شب جو دل بیقرار تھا کیا تھا فصیح اکمل

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY