شہر خاموش ہے سب نیزہ و خنجر چپ ہیں

شاہد ماہلی

شہر خاموش ہے سب نیزہ و خنجر چپ ہیں

شاہد ماہلی

MORE BYشاہد ماہلی

    شہر خاموش ہے سب نیزہ و خنجر چپ ہیں

    کیسی افتاد پڑی ہے کہ ستم گر چپ ہیں

    خوں کا سیلاب تھا جو سر سے ابھی گزرا ہے

    بام و در اب بھی سسکتے ہیں مگر گھر چپ ہیں

    چار سو دشت میں پھیلا ہے اداسی کا دھواں

    پھول سہمے ہیں ہوا ٹھہری ہے منظر چپ ہیں

    مطمئن کوئی نہیں نامۂ اعمال سے آج

    مسکراتا ہے خدا سارے پیمبر چپ ہیں

    لوٹ کے آتی نہیں اب تو صدائے گنبد

    چپ ہیں سب دیر و حرم مسند و منبر چپ ہیں

    میں جو خاموش تھا اک شور تھا ہر محفل میں

    میری گویائی پر اب سارے سخنور چپ ہیں

    مأخذ :
    • کتاب : Kahein Kuch Nahein Hota (Pg. 106)
    • Author : Shahid Mahuli
    • مطبع : Miaar Publications (2003)
    • اشاعت : 2003

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY