aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

شہر دل کاش کہ اک شہر تمنا ہوتا

آصف بلال

شہر دل کاش کہ اک شہر تمنا ہوتا

آصف بلال

MORE BYآصف بلال

    شہر دل کاش کہ اک شہر تمنا ہوتا

    یار اس دشت میں کوئی تو سہارا ہوتا

    میں ترے شہر سے گزرا ہوں تو ہنگامہ ہوا

    گر ترے پاس ٹھہرتا تو بھلا کیا ہوتا

    پا بہ جولاں نہ سہی جاتے مگر ہم بھی ضرور

    صحن مقتل نے ہمیں بھی تو پکارا ہوتا

    شہر کا شہر تمہیں دیکھنے آیا ہوا ہے

    تم نہ آتے تو مری جان تماشا ہوتا

    چشم پرنم بھی اگر حد سے تجاوز کرتی

    خیمۂ خواب میں اک شور سا برپا ہوتا

    یوں سر راہ تماشا نہ بناتے اس کا

    نوک نیزہ پہ اگر کوئی تمہارا ہوتا

    ہم محبت میں کوئی چال جو چلتے آصفؔ

    وہ جو کہنے کو ہمارا ہے ہمارا ہوتا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے