شہر میں سارے چراغوں کی ضیا خاموش ہے

امیر امام

شہر میں سارے چراغوں کی ضیا خاموش ہے

امیر امام

MORE BYامیر امام

    شہر میں سارے چراغوں کی ضیا خاموش ہے

    تیرگی ہر سمت پھیلا کر ہوا خاموش ہے

    صبح کو پھر شور کے ہمراہ چلنا ہے اسے

    رات میں یوں دل دھڑکنے کی صدا خاموش ہے

    کیسا سناٹا تھا جس میں لفظ کن کہنے کے بعد

    گنبد افلاک میں اب تک خدا خاموش ہے

    کچھ بتاتا ہی نہیں گزری ہے کیا پردیس میں

    اپنے گھر کو لوٹتا ایک قافلہ خاموش ہے

    اٹھ رہی ہے میری مٹی سے صدائے العطش

    خالی مشکیزہ لئے اپنا گھٹا خاموش ہے

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    امیر امام

    امیر امام

    RECITATIONS

    امیر امام

    امیر امام

    امیر امام

    شہر میں سارے چراغوں کی ضیا خاموش ہے امیر امام

    مأخذ :
    • کتاب : NAQSH-E-PA HAWAON KE (Pg. 53)
    • اشاعت : 2013

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY