شیخ کے حال پر تأسف ہے

امداد امام اثرؔ

شیخ کے حال پر تأسف ہے

امداد امام اثرؔ

MORE BYامداد امام اثرؔ

    شیخ کے حال پر تأسف ہے

    شکل روزی کی اک تصوف ہے

    جس کی اوقات ہو تصوف پر

    اس کے اس روزگار پر تف ہے

    جن کو دعویٰ ہے حق شناسی کا

    ان سے بندے کو بھی تعارف ہے

    نہ تو عرفاں کے ان میں ہیں انداز

    معرفت سے نہ کچھ تشرف ہے

    کیسی تعمیل حکم خالق کی

    کیسا اسلام صد تأسف ہے

    کون سے امر دیں کو کوئی کہے

    دین کا دین ہی تصوف ہے

    دین احمد سے ہو جو باہر بات

    وہی اس عہد میں تصوف ہے

    مال جو کچھ ہے بے وقوفوں کا

    شیخ کا مال بے تکلف ہے

    ہے اثرؔ یہ تصرف بے جا

    اور کوئی نہیں تصرف ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے