Font by Mehr Nastaliq Web

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

شمع کشتہ کی طرح میں تری محفل سے اٹھا

ناطق گلاوٹھی

شمع کشتہ کی طرح میں تری محفل سے اٹھا

ناطق گلاوٹھی

MORE BYناطق گلاوٹھی

    شمع کشتہ کی طرح میں تری محفل سے اٹھا

    آہ کیسی وہ دھواں تھا جو بجھے دل سے اٹھا

    کھیل ہے ہستئ موہوم مگر ہے دلچسپ

    جو یہاں بیٹھ گیا آ کے وہ مشکل سے اٹھا

    تو نے یہ کس کو اٹھایا ہے کہ دل بیٹھ گئے

    کون بیٹھا ہے کہ فتنہ تری محفل سے اٹھا

    کون غرقاب ہوا ہے کہ اڑاتا ہوا خاک

    آج بے تاب بگولا لب ساحل سے اٹھا

    ہم سفر ہے کوئی افتاد تو پیش آنے کو

    کہ قدم آج الجھتا ہوا منزل سے اٹھا

    جی چرانے کی نہیں شرط دل زار یہاں

    رنج اٹھانے ہی کی ٹھہری ہے تو پھر دل سے اٹھا

    اہل حق بھی یہیں مل جائیں گے اٹھ تو ناطقؔ

    حق کی آواز تو بت خانۂ باطل سے اٹھا

    مأخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے