aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

شراب خون جگر ہے ہم کو شراب ہم لے کے کیا کریں گے

امداد امام اثر

شراب خون جگر ہے ہم کو شراب ہم لے کے کیا کریں گے

امداد امام اثر

MORE BYامداد امام اثر

    شراب خون جگر ہے ہم کو شراب ہم لے کے کیا کریں گے

    گزک کی جا ہے دل برشتہ کباب ہم لے کے کیا کریں گے

    ہزار پردہ میں تم چھپاؤ پہ حسن چھپتا نہیں مری جاں

    تمہارے عارض یہ کہہ رہے ہیں نقاب ہم لے کے کیا کریں گے

    ہمارے نقد دل و جگر کو حساب کے بعد پھیر دیں گے

    حساب لینے کا ان سے حاصل حساب ہم لے کے کیا کریں گے

    ہمیں جو بھیجا ہے تم نے مصحف تو یار حرف آشنا نہیں ہم

    دکھاؤ اپنا رخ کتابی کتاب ہم لے کے کیا کریں گے

    بتوں کی الفت سے بعض آئیں مگر جو دل مان جائے واعظ

    عذاب میں جان پڑ گئی ہے ثواب ہم لے کے کیا کریں گے

    جو منع کرتا ہے دل نہ دیں گے بتوں کو ناصح مگر خدارا

    بتا دے تو ہی کہ اس طرح کا عذاب ہم لے کے کیا کریں گے

    خدا کی بخشی ہوئی ہے وقعت اثرؔ نہیں کوئی ایسی نعمت

    ملی ہے جب عزت سیادت خطاب ہم لے کے کیا کریں گے

    مأخذ:

    غزل اس نے چھیڑی (Pg. 140)

    • مصنف: فرحت احساس
      • ناشر: ریختہ بکس بی۔37،سیکٹر۔1،نوئیڈا
      • سن اشاعت: 2017

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے