شوق کے خواب‌ پریشاں کی ہیں تفسیریں بہت

غلام ربانی تاباں

شوق کے خواب‌ پریشاں کی ہیں تفسیریں بہت

غلام ربانی تاباں

MORE BYغلام ربانی تاباں

    شوق کے خواب‌ پریشاں کی ہیں تفسیریں بہت

    دامن دل پر ابھر آئی ہیں تصویریں بہت

    دوستوں کی بزم میں کچھ سوچ کر لب سی لیے

    ورنہ دامان تصور میں ہیں تقریریں بہت

    زندگی تیرے لیے دفتر کہاں سے لائیے

    چند بوسیدہ ورق ہیں اور تحریریں بہت

    خواہشیں ہی خواہشیں ہیں حسرتیں ہی حسرتیں

    دل سا دیوانہ سلامت ہے تو زنجیریں بہت

    بات اتنی ہے کوئی ہو تو سزاوار صلیب

    اس گئے گزرے زمانے میں بھی تعزیریں بہت

    زندگی کی تلخ تر سچائیوں کا کیا علاج

    یوں تو اہل مصلحت کرتے ہیں تدبیریں بہت

    کاروبار شوق کی حاصل ہیں وہ پسپائیاں

    جن پہ تاباںؔ ناز فرماتی ہیں تقدیریں بہت

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY