شعر کہنے کا مزہ ہے اب تو

گوپال متل

شعر کہنے کا مزہ ہے اب تو

گوپال متل

MORE BYگوپال متل

    شعر کہنے کا مزہ ہے اب تو

    دل کا ہر زخم ہرا ہے اب تو

    اتنا بے صرفہ نہ تھا دل کا لہو

    باغ دامن پہ کھلا ہے اب تو

    بجھ ہی جائے نہ کہیں دل کا چراغ

    واقعی تند ہوا ہے اب تو

    زندگی زندگی ہوتی تھی کبھی

    مر نہ جانے کی سزا ہے اب تو

    تھا کوئی شخص کبھی محرم دل

    وہ مجھے بھول چکا ہے اب تو

    خوگر شہر ہوئے دیوانے

    چاک دامن بھی سیا ہے اب تو

    دل کا یہ حال ہمیشہ تو نہ تھا

    جانے کیا مجھ کو ہوا ہے اب تو

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY