شیوۂ ضبط کو رسوا دل ناشاد نہ کر

رسول جہاں بیگم مخفی بدایونی

شیوۂ ضبط کو رسوا دل ناشاد نہ کر

رسول جہاں بیگم مخفی بدایونی

MORE BYرسول جہاں بیگم مخفی بدایونی

    شیوۂ ضبط کو رسوا دل ناشاد نہ کر

    لب خاموش کو آلودۂ فریاد نہ کر

    دل ہے گنجینۂ صد گوہر اسرار وفا

    اے نگاہ غلط انداز اسے برباد نہ کر

    صفحۂ دل سے مٹا عظمت ماضی کے نقوش

    ہیں یہ بھولے ہوئے افسانے انہیں یاد نہ کر

    شیوۂ جور کو رکھ اہل وفا تک محدود

    عام فیض خلش درد خدا داد نہ کر

    رکھ نظر وسعت دامان کرم پر اپنے

    تو خطا پوش ہے مخفیؔ کی خطا یاد نہ کر

    مآخذ:

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY