شکایت اب نہیں مجھ کو کسی سے

جاوید صدیقی اعظمی

شکایت اب نہیں مجھ کو کسی سے

جاوید صدیقی اعظمی

MORE BY جاوید صدیقی اعظمی

    شکایت اب نہیں مجھ کو کسی سے

    مگر آنکھوں کا رشتہ ہے نمی سے

    محافظ اب چراغوں کا وہی ہے

    جو واقف ہی نہیں کچھ روشنی سے

    گنوا دوں کیسے میں اس طرح یوں ہی

    تجھے پایا ہے میں نے بندگی سے

    نگاہوں سے پلا دیتا ہے جب وہ

    سنبھلتا میں نہیں ہوں پھر کسی سے

    یہیں پر ختم ہوتی ہے کہانی

    جدا اب ہو رہا ہوں زندگی سے

    وہی جاویدؔ تھا مطلوب اس کو

    فرشتہ بن گیا جو آدمی سے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY