سینے میں راز عشق چھپایا نہ جائے گا

حمید جالندھری

سینے میں راز عشق چھپایا نہ جائے گا

حمید جالندھری

MORE BYحمید جالندھری

    سینے میں راز عشق چھپایا نہ جائے گا

    یہ آگ وہ ہے جس کو دبایا نہ جائے گا

    سن لیجیے کہ ہے ابھی آغاز عاشقی

    پھر ہم سے اپنا حال سنایا نہ جائے گا

    اب صلح و آشتی کے زمانے گزر گئے

    اب دوستی کا ہاتھ بڑھایا نہ جائے گا

    ہم آہ تک بھی لا نہ سکیں گے زبان پر

    وہ روٹھ جائیں گے تو منایا نہ جائے گا

    وہ دور ہیں تو دل کو ہے اک اضطراب سا

    وہ آئیں گے تو آپ میں آیا نہ جائے گا

    مأخذ :
    • کتاب : Shaam e Sehra (Pg. 173)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY