سوچنا بھی عجیب عادت ہے

وکاس رانا

سوچنا بھی عجیب عادت ہے

وکاس رانا

MORE BYوکاس رانا

    سوچنا بھی عجیب عادت ہے

    یہ بھی تو سوچنے کی صورت ہے

    اب مجھے آپ چھوڑ جائیے گا

    اب مجھے آپ کی ضرورت ہے

    میری سگریٹ پہ اعتراض تو ہیں

    کیا مجھے چومنے کی حسرت ہے

    بس اپنے آپ میں الجھا ہوا ہے

    اسے کہہ دو کہ شعر اچھا ہوا ہے

    سمندر کی چٹائی کھینچ لو اب

    بہت دن سے یہیں بیٹھا ہوا ہے

    بنا تھا تم نے پچھلی سردیوں میں

    یہ میں نے ہجر جو پہنا ہوا ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY