سوز الم سے دور ہوا جا رہا ہوں میں

شعری بھوپالی

سوز الم سے دور ہوا جا رہا ہوں میں

شعری بھوپالی

MORE BYشعری بھوپالی

    سوز الم سے دور ہوا جا رہا ہوں میں

    وہ تو جلا رہے ہیں بجھا جا رہا ہوں میں

    مانوس التفات ہوا جا رہا ہوں میں

    دیکھ اے نگاہ ناز مٹا جا رہا ہوں میں

    جلووں کی تابشیں ہیں کہ اللہ کی پناہ

    رنگیں تجلیوں میں گھرا جا رہا ہوں میں

    یہ آتے جاتے ہے نگہ غیظ کس لئے

    لے آج تیرے در سے اٹھا جا رہا ہوں میں

    راہوں سے آشنا ہوں نہ منزل شناس ہوں

    لے جا رہا ہے شوق چلا جا رہا ہوں میں

    کیفیت اس نگاہ کی ہم دم بتاؤں کیا

    اک موج ہے کہ جس میں بہا جا رہا ہوں میں

    یا ابتدائے عشق میں غم میرے ساتھ تھا

    یا غم کے ساتھ ساتھ چلا جا رہا ہوں میں

    کیا چیز ہے نوید رہائی کہ ہم نفس

    جیسے قفس سمیت اڑا جا رہا ہوں میں

    میری تباہیوں پہ زمانے کو رشک ہے

    تم تو مٹا رہے ہو بنا جا رہا ہوں میں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY