صبح وفا سے ہجر کا لمحہ جدا کرو

شاہین عباس

صبح وفا سے ہجر کا لمحہ جدا کرو

شاہین عباس

MORE BY شاہین عباس

    صبح وفا سے ہجر کا لمحہ جدا کرو

    منزل سے گرد، گرد سے رستہ جدا کرو

    اک نقش ہو نہ پائے ادھر سے ادھر مرا

    جیسا تمہیں ملا تھا میں ویسا جدا کرو

    شب زادگاں! تم اہل خبر سے نہیں سو تم!

    اپنا مدار اپنا مدینہ جدا کرو

    یاں پے بہ پے جو خواب کھلے نے بہ نے کھلے

    جتنا جدا یہ ہو سکے اتنا جدا کرو

    میں تھا کہ اپنے آپ میں خالی سا ہو گیا

    اس نے تو کہہ دیا مرا حصہ جدا کرو

    مآخذ:

    • کتاب : Beesveen Sadi Ki Behtareen Ishqiya Ghazlen (Pg. 125)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY