سکون دل کی خاطر اک سہارا ڈھونڈتے ہیں

اشفاق حسین

سکون دل کی خاطر اک سہارا ڈھونڈتے ہیں

اشفاق حسین

MORE BYاشفاق حسین

    سکون دل کی خاطر اک سہارا ڈھونڈتے ہیں

    جو گردش میں نہیں ہے وہ ستارا ڈھونڈتے ہیں

    ابھی تو تجھ سے وابستہ ہیں پچھلے زخم سارے

    شب رفتہ تجھے ہم کیوں دوبارا ڈھونڈتے ہیں

    کوئی گھر ہی نہیں تو بے گھری کا زخم کیسا

    سکونت کے لیے اک استعارا ڈھونڈتے ہیں

    زمیں اچھی لگی ہے آسماں پر جا کے ہم کو

    کہاں ہے اس زمیں پر گھر ہمارا ڈھونڈتے ہیں

    یہ دریا زندگی کا پار کیسے ہو کہ جب ہم

    کنارے پر کھڑے ہیں اور کنارہ ڈھونڈتے ہیں

    ہماری خواہش بے خواہشی جو راکھ کر دے

    ہم اپنی شخصیت میں وہ شرارہ ڈھونڈتے ہیں

    کسی مہتاب کو قدموں میں لے آنے سے پہلے

    ہم ان آنکھوں کا ہلکا سا اشارہ ڈھونڈتے ہیں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY