سنو تو عارضۂ اختلاج رہنے دو

راہی فدائی

سنو تو عارضۂ اختلاج رہنے دو

راہی فدائی

MORE BY راہی فدائی

    سنو تو عارضۂ اختلاج رہنے دو

    سکوں کے ٹھیک نہیں ہیں مزاج رہنے دو

    بحکم شاہ تقاریب امن کل ہوں گے

    شرر گزیدہ ہے ماحول آج رہنے دو

    تم اپنی نبض کی رفتار پر نظر رکھو

    خلاف گردش نو احتجاج رہنے دو

    کسی کو سایہ کسی کو گل و ثمر دے گا

    ہرا بھرا ہے درخت رواج رہنے دو

    زمین فکر و ہنر بانجھ ہے ابھی راہیؔ

    حصول داد وصول خراج رہنے دو

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY