سورج نے جب شب کا لبادہ پہن لیا تھا

خورشید ربانی

سورج نے جب شب کا لبادہ پہن لیا تھا

خورشید ربانی

MORE BYخورشید ربانی

    سورج نے جب شب کا لبادہ پہن لیا تھا

    ہر اک شے نے اپنا سایہ پہن لیا تھا

    اپنا عریاں جسم چھپانے کی کوشش میں

    تیز ہوا نے پتا پتا پہن لیا تھا

    ماتمی کپڑے پہن لیے تھے میری زمیں نے

    اور فلک نے چاند ستارہ پہن لیا تھا

    سارا شہر شریک ہوا تھا اس کے دکھ میں

    جس دن اس نے غم کا لمحہ پہن لیا تھا

    مایوسی کے عالم میں بھی اے خورشیدؔ

    ہم نے اک امید کا رستہ پہن لیا تھا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY