تلاش یار میں گزری ہے زندگی تنہا

محفوظ اثر

تلاش یار میں گزری ہے زندگی تنہا

محفوظ اثر

MORE BYمحفوظ اثر

    تلاش یار میں گزری ہے زندگی تنہا

    بھٹک رہا ہوں اندھیروں میں آج بھی تنہا

    وہاں تو سانس بھی لینا عذاب لگتا ہے

    سسک رہی ہو جہاں کوئی زندگی تنہا

    اکیلا میں ہی نہیں ہوں اسیر‌ ظلمت غم

    بجھا بجھا ہے اندھیروں میں چاند بھی تنہا

    تمام چاند ستاروں کا نور ایک طرف

    اور ایک سمت ہے سورج کی روشنی تنہا

    مرے خلوص میں شاید کمی ہے کچھ ورنہ

    مجھی سے کرتے ہیں کیوں لوگ دشمنی تنہا

    کسی کی زلف کا سایہ تلاش کر ورنہ

    اثرؔ گزر نہ سکے گی یہ زندگی تنہا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY