تمام جلنا جلانا فسانہ ہوتا ہوا

عرفان صدیقی

تمام جلنا جلانا فسانہ ہوتا ہوا

عرفان صدیقی

MORE BY عرفان صدیقی

    تمام جلنا جلانا فسانہ ہوتا ہوا

    چراغ لمبے سفر پر روانہ ہوتا ہوا

    عجب گداز پرندے بدن میں اڑتے ہوئے

    اسے گلے سے لگائے زمانہ ہوتا ہوا

    ہری زمین سلگنے لگی تو راز کھلا

    کہ جل گیا وہ شجر شامیانہ ہوتا ہوا

    نظر میں ٹھہری ہوئی ایک روشنی کی لکیر

    افق پہ سایۂ شب بیکرانہ ہوتا ہوا

    رقابتیں مرا عہدہ بحال کرتی ہوئی

    میں جان دینے کے فن میں یگانہ ہوتا ہوا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY