تن پر تیری پیاس اوڑھ کے گاتی ہوں

سوہن راہی

تن پر تیری پیاس اوڑھ کے گاتی ہوں

سوہن راہی

MORE BYسوہن راہی

    تن پر تیری پیاس اوڑھ کے گاتی ہوں

    میں تیری مسکان لئے مسکاتی ہوں

    میرے نینن تیرے چاند ستارے ہیں

    تیری سوچ کو نیل گگن پہناتی ہوں

    تیرے گیتوں کی مدماتی مدرا کو

    دن رینا پیتی ہوں اور پلاتی ہوں

    تن درپن کا پانی اور دمک اٹھے

    جب میں تیرے نین سے نین ملاتی ہوں

    تنہائی جب نام ترا دہراتی ہے

    میں اپنی پرچھائیں سے ڈر جاتی ہوں

    پیتم تیری پائل کیا کیا شور کرے

    پھولوں میں جب روپ میں تیرا پاتی ہوں

    جیون سر دیکھا ہے تیرے بولوں سے

    راہیؔ تیری چپ سے میں مر جاتی ہوں

    مآخذ:

    • کتاب : Mujalla Dastavez (Pg. 568)
    • Author : Aziz Nabeel
    • مطبع : Edarah Dastavez (2013-14)
    • اشاعت : 2013-14

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY