تنہا چاند کو دیکھا ہوگا

خواجہ ساجد

تنہا چاند کو دیکھا ہوگا

خواجہ ساجد

MORE BYخواجہ ساجد

    تنہا چاند کو دیکھا ہوگا

    کوئی یاد تو آیا ہوگا

    ضبط کا شیشہ چٹخا ہوگا

    یاد نے کنکر پھینکا ہوگا

    ساون کی بھیگی خوشبو نے

    سانسوں کو سلگایا ہوگا

    گاگر سے چمٹی ہے رادھاؔ

    شیامؔ جو اس کو چھوتا ہوگا

    ہم کیا خاک غزل لکھیں جب

    انگڑائی پر پہرہ ہوگا

    تیرے تیور دیکھ کے اکثر

    موسم رنگ بدلتا ہوگا

    جس نے پیار لٹایا اس کا

    آنسو ہی سرمایہ ہوگا

    وصل کی چاہ میں تپتا سورج

    ساغر ڈوب کے روتا ہوگا

    سونپ کے موجوں کو بے چینی

    پیاسا ساحل سوتا ہوگا

    تارہ ٹوٹا اور دل دھڑکا

    تجھے کسی نے مانگا ہوگا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY