شجر پہ بیٹھے ہوئے ہیں پنچھی تناؤ میں سب

رازق انصاری

شجر پہ بیٹھے ہوئے ہیں پنچھی تناؤ میں سب

رازق انصاری

MORE BYرازق انصاری

    شجر پہ بیٹھے ہوئے ہیں پنچھی تناؤ میں سب

    ابھی شکاری ہیں اپنے اپنے پڑاؤ میں سب

    محبتیں ہو رہی ہیں زخمی کسے خبر ہے

    ابھی ہیں مصروف اپنے رشتے چناؤ میں سب

    نہیں تم ایسے نہیں ہو جیسا یہ پڑھ رہے ہیں

    ہمیں پتا ہے قصیدہ خواں ہیں دباؤ میں سب

    بنا کے دن بھر مری عیادت کو اک بہانہ

    نمک لگانے کو آتے رہتے ہیں گھاؤ میں سب

    تمہارے اندر کے آدمی سے نہیں ہیں واقف

    یہ لوگ بیٹھے ہوئے ہیں کاغذ کی ناؤ میں سب

    موضوعات :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY