تذکرہ چھیڑ دیا آپ نے کیوں جانے کا

جرم محمد آبادی

تذکرہ چھیڑ دیا آپ نے کیوں جانے کا

جرم محمد آبادی

MORE BYجرم محمد آبادی

    تذکرہ چھیڑ دیا آپ نے کیوں جانے کا

    گھر میں نقشہ نظر آنے لگا ویرانے کا

    جرم الفت نہیں اظہار تمنا لیکن

    ہاتھ پھیلانا بھی شیوہ نہیں دیوانے کا

    ظلم کے بعد ہوا صبر کا درجہ روشن

    غم کیا شمع نے کس حسن سے پروانے کا

    دشت گردی میں گریباں کے اڑائے پرزے

    پاؤں کے ساتھ چلا ہاتھ بھی دیوانے کا

    اب سمجھ بوجھ کے اس دور میں پینا اے جرمؔ

    رنگ اچھا نظر آتا نہیں میخانے کا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY