تیرا آنچل نہیں ہوتا ہے

سحرتاب رومانی

تیرا آنچل نہیں ہوتا ہے

سحرتاب رومانی

MORE BYسحرتاب رومانی

    تیرا آنچل نہیں ہوتا ہے

    ابر بادل نہیں ہوتا ہے

    بارشیں تو بہت ہوتی ہیں

    دشت جل تھل نہیں ہوتا ہے

    مستقل ہے یہ کیسی کمی

    کچھ مکمل نہیں ہوتا ہے

    زندگی جب تلک رہتی ہے

    مسئلہ حل نہیں ہوتا ہے

    صرف اس کے شجر ہوتے ہیں

    صبر کا پھل نہیں ہوتا ہے

    ایک جنگل نظر آنے سے

    شہر جنگل نہیں ہوتا ہے

    اس کو تفصیل سے پڑھتا ہوں

    جو مفصل نہیں ہوتا ہے

    بات کرتے ہیں صدیوں کی ہم

    پاس اک پل نہیں ہوتا ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY