تیرے آنے کا انتظار رہا

رسا چغتائی

تیرے آنے کا انتظار رہا

رسا چغتائی

MORE BY رسا چغتائی

    INTERESTING FACT

    غزل کا مطلع ''تیرے آنے کا انتظار رہا'' ۔ رسا چغتائی کے مجموعہ کا نام بھی ہے

    تیرے آنے کا انتظار رہا

    عمر بھر موسم بہار رہا

    پا بہ زنجیر زلف یار رہی

    دل اسیر خیال یار رہا

    ساتھ اپنے غموں کی دھوپ رہی

    ساتھ اک سرو سایہ دار رہا

    میں پریشان حال آشفتہ

    صورت رنگ روزگار رہا

    آئنہ آئنہ رہا پھر بھی

    لاکھ در پردۂ غبار رہا

    کب ہوائیں تہ کمند آئیں

    کب نگاہوں پہ اختیار رہا

    تجھ سے ملنے کو بے قرار تھا دل

    تجھ سے مل کر بھی بے قرار رہا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY