تیرے لہجے کا تری بات کا آئینہ ہے

قیصر صدیقی

تیرے لہجے کا تری بات کا آئینہ ہے

قیصر صدیقی

MORE BYقیصر صدیقی

    تیرے لہجے کا تری بات کا آئینہ ہے

    میرا ہر شعر تری ذات کا آئینہ ہے

    تیری زلفوں کے مچلتے ہوئے ساون کا سماں

    میرے مہکے ہوئے جذبات کا آئینہ ہے

    میرے چہرے کو ذرا غور سے دیکھو تو سہی

    میرا چہرہ مرے حالات کا آئینہ ہے

    لہلہاتی ہوئی بھرپور جوانی تیری

    گنگناتی ہوئی برسات کا آئینہ ہے

    اے مری جان غزل اے مری شہناز غزل

    تیرا نغمہ مرے جذبات کا آئینہ ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY