تیری نظروں سے یار اتر جاؤں

نتن نایاب

تیری نظروں سے یار اتر جاؤں

نتن نایاب

MORE BY نتن نایاب

    تیری نظروں سے یار اتر جاؤں

    اس سے بہتر یہ ہے کہ مر جاؤں

    میں بھی اب کیا کروں اے میرے رقیب

    میری فطرت نہیں کہ ڈر جاؤں

    گر تو دستار مانگ لے مجھ سے

    تیرے قدموں میں دے کے سر جاؤں

    پھر کوئی اور ہی بنوں آخر

    ٹوٹ جاؤں تو اس قدر جاؤں

    تو بھی بے شک نظر گھما لینا

    میں اگر پھیر کر نظر جاؤں

    تو مجھے چھوڑ کر نہیں جانا

    میں تجھے چھوڑ کر اگر جاؤں

    اوپر اوپر تو پار جا نہ سکا

    سوچتا ہوں بھنور بھنور جاؤں

    ہاتھ خالی ہیں چشم تر ہے میری

    اب تو ہی بول کیسے گھر جاؤں

    یوں معطر کروں فضا نایابؔ

    خوشبوؤں کی طرح بکھر جاؤں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY