تھا اجل کا میں اجل کا ہو گیا

شاد عظیم آبادی

تھا اجل کا میں اجل کا ہو گیا

شاد عظیم آبادی

MORE BYشاد عظیم آبادی

    تھا اجل کا میں اجل کا ہو گیا

    بیچ میں چونکا تو تھا پھر سو گیا

    لطف تو یہ ہے کہ آپ اپنا نہیں

    جو ہوا تیرا وہ تیرا ہو گیا

    کاٹے کھاتی ہے مجھے ویرانگی

    کون اس مدفن پہ آ کر رو گیا

    بحر ہستی کے عمق کو کیا بتاؤں

    ڈوب کر میں شادؔ اس میں کھو گیا

    RECITATIONS

    فصیح اکمل

    فصیح اکمل

    فصیح اکمل

    تھا اجل کا میں اجل کا ہو گیا فصیح اکمل

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY