ٹھہرے جذبات کے دریا کو روانی دے کر

ورن گگنیجہ واحد

ٹھہرے جذبات کے دریا کو روانی دے کر

ورن گگنیجہ واحد

MORE BYورن گگنیجہ واحد

    ٹھہرے جذبات کے دریا کو روانی دے کر

    ہم نے کردار بچایا ہے کہانی دے کر

    حد سے بڑھ جائے تو ہر چیز بری ہوتی ہے

    میں نے اک فصل جلا ڈالی ہے پانی دے کر

    اس نئے لہجے سے دل ڈوبنے لگتا ہے مرا

    تم پکارو مجھے آواز پرانی دے کر

    اب مجھے پیاس نبھانے کا ہنر آتا ہے

    خاک صحرا میں اڑائی ہے جوانی دے کر

    میرا رب کرتا ہے احسان مسلسل واحدؔ

    شعر در شعر مجھے مصرع ثانی دے کر

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY