تھکن کو جام کریں آرزو کو بادہ کریں

راغب اختر

تھکن کو جام کریں آرزو کو بادہ کریں

راغب اختر

MORE BYراغب اختر

    تھکن کو جام کریں آرزو کو بادہ کریں

    سکون دل کے لیے درد کا اعادہ کریں

    ابھرتی ڈوبتی سانسوں پہ منکشف ہو جائیں

    سلگتی گرم نگاہوں کو پھر لبادہ کریں

    بچھائیں دشت نوردی جنوں کی راہوں میں

    فراق شہر رفاقت میں ایستادہ کریں

    تمہارے شہر کے آداب بھی عجیب سے ہیں

    کہ درد کم ہو مگر آہ کچھ زیادہ کریں

    یہ سرد رات نگل لے گی ساعتوں کا وجود

    جلائیں شاخ بدن اور استفادہ کریں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY