Font by Mehr Nastaliq Web

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

ترا دست ستم ہے اور میں ہوں

قاضی مستقیم الدین سحر

ترا دست ستم ہے اور میں ہوں

قاضی مستقیم الدین سحر

MORE BYقاضی مستقیم الدین سحر

    ترا دست ستم ہے اور میں ہوں

    مرا چھوٹا سا دم ہے اور میں ہوں

    یہ دنیا ہے الم ہے اور میں ہوں

    تری تیغ ستم ہے اور میں ہوں

    مرے اپنے نہیں ہیں آج اپنے

    یہی تو ایک غم ہے اور میں ہوں

    خدا جانے کہاں لے جائے وحشت

    ترا نقش قدم ہے اور میں ہوں

    مجھے منظور ہے ہر بات تیری

    سر تسلیم خم ہے اور میں ہوں

    ادھر خوشیوں کے نظارے ہیں تم ہو

    ادھر رنج و الم ہے اور میں ہوں

    مصیبت میں بھی ہے یک گونہ راحت

    بہت اس کا کرم ہے اور میں ہوں

    مسرت کی سحر دیکھی نہیں ہے

    مسلسل شام غم ہے اور میں ہوں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے