ترا کرم کہ میں جب مات تک پہنچ جاتا

عقیل شاہ

ترا کرم کہ میں جب مات تک پہنچ جاتا

عقیل شاہ

MORE BYعقیل شاہ

    ترا کرم کہ میں جب مات تک پہنچ جاتا

    تو کوئی ہاتھ مرے ہاتھ تک پہنچ جاتا

    میں اس کی بزم میں چپ چاپ ہی رہا کرتا

    مگر وہ پھر بھی مری بات تک پہنچ جاتا

    میں بھاؤ تاؤ اگر کرتا تو وہ خواب فروش

    قیاس ہے مری اوقات تک پہنچ جاتا

    اگر نہ ملتا مجھے شام ماہ آوارہ

    یقین مانو میں گھر رات تک پہنچ جاتا

    میں اپنے بھائی کو پردیس کیوں بلاتا عقیلؔ

    وہ اس طرح مرے حالات تک پہنچ جاتا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY