ترے آنے کا دھوکا سا رہا ہے

ناصر کاظمی

ترے آنے کا دھوکا سا رہا ہے

ناصر کاظمی

MORE BYناصر کاظمی

    ترے آنے کا دھوکا سا رہا ہے

    دیا سا رات بھر جلتا رہا ہے

    عجب ہے رات سے آنکھوں کا عالم

    یہ دریا رات بھر چڑھتا رہا ہے

    سنا ہے رات بھر برسا ہے بادل

    مگر وہ شہر جو پیاسا رہا ہے

    وہ کوئی دوست تھا اچھے دنوں کا

    جو پچھلی رات سے یاد آ رہا ہے

    کسے ڈھونڈوگے ان گلیوں میں ناصرؔ

    چلو اب گھر چلیں دن جا رہا ہے

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    عابدہ پروین

    عابدہ پروین

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    ترے آنے کا دھوکا سا رہا ہے نعمان شوق

    موضوعات:

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY