ترے جیسا میرا بھی حال تھا نہ سکون تھا نہ قرار تھا

اعتبار ساجد

ترے جیسا میرا بھی حال تھا نہ سکون تھا نہ قرار تھا

اعتبار ساجد

MORE BYاعتبار ساجد

    ترے جیسا میرا بھی حال تھا نہ سکون تھا نہ قرار تھا

    یہی عمر تھی مرے ہم نشیں کہ کسی سے مجھ کو بھی پیار تھا

    میں سمجھ رہا ہوں تری کسک ترا میرا درد ہے مشترک

    اسی غم کا تو بھی اسیر ہے اسی دکھ کا میں بھی شکار تھا

    فقط ایک دھن تھی کہ رات دن اسی خواب زار میں گم رہیں

    وہ سرور ایسا سرور تھا وہ خمار ایسا خمار تھا

    کبھی لمحہ بھر کی بھی گفتگو مری اس کے ساتھ نہ ہو سکی

    مجھے فرصتیں نہیں مل سکیں وہ ہوا کے رتھ پر سوار تھا

    ہم عجیب طرز کے لوگ تھے کہ ہمارے اور ہی روگ تھے

    میں خزاں میں اس کا تھا منتظر اسے انتظار بہار تھا

    اسے پڑھ کے تم نہ سمجھ سکے کہ مری کتاب کے روپ میں

    کوئی قرض تھا کئی سال کا کئی رت جگوں کا ادھار تھا

    مأخذ :
    • کتاب : Mujhe Koi Sham Udhar Do (Pg. 19)
    • Author : Aitabar Sajid
    • مطبع : Ilm o Irfan Publishers Lahore (2007,2009)
    • اشاعت : 2007,2009

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY