تری آواز پر رکے ہی نہیں

بابر علی اسد

تری آواز پر رکے ہی نہیں

بابر علی اسد

MORE BYبابر علی اسد

    تری آواز پر رکے ہی نہیں

    سو کئی واقعے ہوئے ہی نہیں

    اس نے جتنے دئے میں لے آیا

    مفت کے سانس تھے گنے ہی نہیں

    معجزے وقت پر نہیں ہوتے

    سانحے وقت دیکھتے ہی نہیں

    جھوٹ ہے دل بدر کئے گئے ہیں

    سچ کہیں ہم وہاں پہ تھے ہی نہیں

    سب حقیقت پسند ہو گئے ہیں

    لوگ اب خواب دیکھتے ہی نہیں

    جو ترے نام میں نہیں آتے

    ایسے حرفوں کو جانتے ہی نہیں

    رس رہے ہیں جگہ جگہ سے اسدؔ

    اس نے کچھ زخم تو سیے ہی نہیں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY