تری امید ترا انتظار جب سے ہے

فیض احمد فیض

تری امید ترا انتظار جب سے ہے

فیض احمد فیض

MORE BYفیض احمد فیض

    تری امید ترا انتظار جب سے ہے

    نہ شب کو دن سے شکایت نہ دن کو شب سے ہے

    کسی کا درد ہو کرتے ہیں تیرے نام رقم

    گلہ ہے جو بھی کسی سے ترے سبب سے ہے

    ہوا ہے جب سے دل ناصبور بے قابو

    کلام تجھ سے نظر کو بڑے ادب سے ہے

    اگر شرر ہے تو بھڑکے جو پھول ہے تو کھلے

    طرح طرح کی طلب تیرے رنگ لب سے ہے

    کہاں گئے شب فرقت کے جاگنے والے

    ستارۂ سحری ہم کلام کب سے ہے

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    امانت علی خان

    امانت علی خان

    ناہید اختر

    ناہید اختر

    مأخذ :
    • کتاب : Nuskha Hai Wafa (Pg. 293 (369))

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY