تو کیا تڑپ نہ تھی اب کے مرے پکارے میں

شہرام سرمدی

تو کیا تڑپ نہ تھی اب کے مرے پکارے میں

شہرام سرمدی

MORE BYشہرام سرمدی

    تو کیا تڑپ نہ تھی اب کے مرے پکارے میں

    وگرنہ وہ تو چلا آتا تھا اشارے میں

    وہ بات اس کو بتانا بہت ضروری تھی

    وہ بات کس لیے کہتا میں استعارے میں

    مدام ہجر کدے میں وہ یاد روشن ہے

    کہاں ہے اے دل ناکام تو خسارے میں

    مرے علاوہ سبھی لوگ اب یہ مانتے ہیں

    غلط نہیں تھی مری رائے اس کے بارے میں

    فقیر ہے پہ کرامت کسی نے دیکھی نہیں

    گزر بسر ہی کیا کرتا ہے گزارے میں

    مآخذ:

    • کتاب : Na Mau'ud (Pg. 171)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY